Kamil Bahzadi's Photo'

کاملؔ بہزادی

1934 | بھوپال, ہندوستان

غزل 5

 

اشعار 6

آکاش کی حسین فضاؤں میں کھو گیا

میں اس قدر اڑا کہ خلاؤں میں کھو گیا

کیا ترے شہر کے انسان ہیں پتھر کی طرح

کوئی نغمہ کوئی پائل کوئی جھنکار نہیں

اس قدر میں نے سلگتے ہوئے گھر دیکھے ہیں

اب تو چبھنے لگے آنکھوں میں اجالے مجھ کو

ای- کتاب 3

دھنک

 

2015

تلوک چند محروم : ایک مطالعہ

 

1999

تلوک چند محروم ایک مطالعہ

 

1996

 

تصویری شاعری 1

ایک بھٹکے ہوئے لشکر کے سوا کچھ بھی نہیں زندگانی مری ٹھوکر کے سوا کچھ بھی نہیں آپ دامن کو ستاروں سے سجائے رکھئے میری قسمت میں تو پتھر کے سوا کچھ بھی نہیں تیرا دامن تو چھڑا لے گئے دنیا والے اب مرے ہاتھ میں ساغر کے سوا کچھ بھی نہیں میری ٹوٹی ہوئی کشتی کا خدا حافظ ہے دور تک گہرے سمندر کے سوا کچھ بھی نہیں لوگ بھوپال کی تعریف کیا کرتے ہیں اس نگر میں تو ترے گھر کے سوا کچھ بھی نہیں

 

آڈیو 5

آکاش کی حسین فضاؤں میں کھو گیا

ایک بھٹکے ہوئے لشکر کے سوا کچھ بھی نہیں

سایۂ_زلف نہیں شعلۂ_رخسار نہیں

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

شعرا کے مزید "بھوپال"

  • والی آسی والی آسی
  • شعیب نظام شعیب نظام
  • ابو الحسنات حقی ابو الحسنات حقی
  • اسلم محمود اسلم محمود
  • خورشید طلب خورشید طلب
  • اختر پیامی اختر پیامی
  • احمد شناس احمد شناس
  • رشید کوثر فاروقی رشید کوثر فاروقی
  • انجم لدھیانوی انجم لدھیانوی
  • فرحان سالم فرحان سالم