اگر تم روک دو اظہار لاچاری کروں گا

عبدالرحمان واصف

اگر تم روک دو اظہار لاچاری کروں گا

عبدالرحمان واصف

MORE BYعبدالرحمان واصف

    اگر تم روک دو اظہار لاچاری کروں گا

    جو کہنی ہے مگر وہ بات میں ساری کروں گا

    مرا دل بھر گیا بستی کی رونق سے سو اب میں

    کسی جلتے ہوئے صحرا کی تیاری کروں گا

    سر راہ تمنا خاک ڈالوں گا میں سر میں

    جو آنسو بجھ گئے ان کی عزا داری کروں گا

    مجھے اب آ گئے ہیں نفرتوں کے بیج بونے

    سو میرا حق یہ بنتا ہے کہ سرداری کروں گا

    میں لے آؤں گا میداں میں سبھی لفظوں کے لشکر

    اور ان سے لوح فکر و فن پہ پرکاری کروں گا

    کئی غم آ گئے ہیں حال میرا پوچھنے کو

    میں اب اس حال میں کس کس کی دل داری کروں گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY