بہانہ ڈھونڈتے رہتے ہیں کوئی رونے کا

جاوید اختر

بہانہ ڈھونڈتے رہتے ہیں کوئی رونے کا

جاوید اختر

MORE BY جاوید اختر

    بہانہ ڈھونڈتے رہتے ہیں کوئی رونے کا

    ہمیں یہ شوق ہے کیا آستیں بھگونے کا

    اگر پلک پہ ہے موتی تو یہ نہیں کافی

    ہنر بھی چاہئے الفاظ میں پرونے کا

    جو فصل خواب کی تیار ہے تو یہ جانو

    کہ وقت آ گیا پھر درد کوئی بونے کا

    یہ زندگی بھی عجب کاروبار ہے کہ مجھے

    خوشی ہے پانے کی کوئی نہ رنج کھونے کا

    ہے پاش پاش مگر پھر بھی مسکراتا ہے

    وہ چہرہ جیسے ہو ٹوٹے ہوئے کھلونے کا

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY