دیکھنا بھی تو انہیں دور سے دیکھا کرنا

حسرتؔ موہانی

دیکھنا بھی تو انہیں دور سے دیکھا کرنا

حسرتؔ موہانی

MORE BYحسرتؔ موہانی

    دیکھنا بھی تو انہیں دور سے دیکھا کرنا

    شیوۂ عشق نہیں حسن کو رسوا کرنا

    اک نظر بھی تری کافی تھی پئے راحت جاں

    کچھ بھی دشوار نہ تھا مجھ کو شکیبا کرنا

    ان کو یاں وعدے پہ آ لینے دے اے ابر بہار

    جس قدر چاہنا پھر بعد میں برسا کرنا

    شام ہو یا کہ سحر یاد انہیں کی رکھنی

    دن ہو یا رات ہمیں ذکر انہیں کا کرنا

    صوم زاہد کو مبارک رہے عابد کو صلوٰۃ

    عاصیوں کو تری رحمت پہ بھروسا کرنا

    عاشقو حسن جفاکار کا شکوہ ہے گناہ

    تم خبردار خبردار نہ ایسا کرنا

    کچھ سمجھ میں نہیں آتا کہ یہ کیا ہے حسرتؔ

    ان سے مل کر بھی نہ اظہار تمنا کرنا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اقبال بانو

    اقبال بانو

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دیکھنا بھی تو انہیں دور سے دیکھا کرنا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY