دل کے کہنے پہ چلوں عقل کا کہنا نہ کروں

وحشتؔ رضا علی کلکتوی

دل کے کہنے پہ چلوں عقل کا کہنا نہ کروں

وحشتؔ رضا علی کلکتوی

MORE BYوحشتؔ رضا علی کلکتوی

    دل کے کہنے پہ چلوں عقل کا کہنا نہ کروں

    میں اسی سوچ میں ہوں کیا کروں اور کیا نہ کروں

    زندگی اپنی کسی طرح بسر کرنا ہے

    کیا کروں آہ اگر تیری تمنا نہ کروں

    مجلس وعظ میں کیا میری ضرورت ناصح

    گھر میں بیٹھا ہوا شغل مے و مینا نہ کروں

    مست ہے حال میں دل بے خیر مستقبل

    سوچتا ہوں اسے ہشیار کروں یا نہ کروں

    کس طرح حسن زباں کی ہو ترقی وحشتؔ

    میں اگر خدمت اردوئے معلیٰ نہ کروں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دل کے کہنے پہ چلوں عقل کا کہنا نہ کروں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY