دل کو خیال یار نے مخمور کر دیا

حسرتؔ موہانی

دل کو خیال یار نے مخمور کر دیا

حسرتؔ موہانی

MORE BY حسرتؔ موہانی

    دل کو خیال یار نے مخمور کر دیا

    ساغر کو رنگ بادہ نے پر نور کر دیا

    مانوس ہو چلا تھا تسلی سے حال دل

    پھر تو نے یاد آ کے بدستور کر دیا

    گستاخ دستیوں کا نہ تھا مجھ میں حوصلہ

    لیکن ہجوم شوق نے مجبور کر دیا

    کچھ ایسی ہو گئی ہے تیرے غم میں مبتلا

    گویا کسی نے جان کو مسحور کر دیا

    بیتابیوں سے چھپ نہ سکا ماجرائے دل

    آخر حضور یار بھی مذکور کر دیا

    اہل نظر کو بھی نظر آیا نہ روئے یار

    یاں تک حجاب نور نے مستور کر دیا

    حسرتؔ بہت ہے مرتبۂ عاشقی بلند

    تجھ کو تو مفت لوگوں نے مشہور کر دیا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دل کو خیال یار نے مخمور کر دیا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY