دل مرکز حجاب بنایا نہ جائے گا

شکیل بدایونی

دل مرکز حجاب بنایا نہ جائے گا

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    دل مرکز حجاب بنایا نہ جائے گا

    ان سے بھی راز عشق چھپایا نہ جائے گا

    سر کو کبھی قدم پہ جھکایا نہ جائے گا

    ان کے نقوش پا کو مٹایا نہ جائے گا

    بے وجہ انتظار دکھانے سے فائدہ

    کہہ دیجئے کہ سامنے آیا نہ جائے گا

    آنکھوں میں اشک قلب پریشاں نظر اداس

    اس طرح ان کو چھوڑ کے جایا نہ جائے گا

    وہ خود کہیں تو شرح محبت بیاں کروں

    نغمہ بغیر ساز سنایا نہ جائے گا

    بہتر یہی ہے ذکر محبت نہ چھیڑئیے

    نقشہ بگڑ گیا تو بنایا نہ جائے گا

    دل کی طرف شکیلؔ توجہ ضرور ہو

    یہ گھر اجڑ گیا تو بسایا نہ جائے گا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دل مرکز حجاب بنایا نہ جائے گا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY