دن اک کے بعد ایک گزرتے ہوئے بھی دیکھ

محمد علوی

دن اک کے بعد ایک گزرتے ہوئے بھی دیکھ

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    دن اک کے بعد ایک گزرتے ہوئے بھی دیکھ

    اک دن تو اپنے آپ کو مرتے ہوئے بھی دیکھ

    ہر وقت کھلتے پھول کی جانب تکا نہ کر

    مرجھا کے پتیوں کو بکھرتے ہوئے بھی دیکھ

    ہاں دیکھ برف گرتی ہوئی بال بال پر

    تپتے ہوئے خیال ٹھٹھرتے ہوئے بھی دیکھ

    اپنوں میں رہ کے کس لیے سہما ہوا ہے تو

    آ مجھ کو دشمنوں سے نہ ڈرتے ہوئے بھی دیکھ

    پیوند بادلوں کے لگے دیکھ جا بہ جا

    بگلوں کو آسمان کترتے ہوئے بھی دیکھ

    حیران مت ہو تیرتی مچھلی کو دیکھ کر

    پانی میں روشنی کو اترتے ہوئے بھی دیکھ

    اس کو خبر نہیں ہے ابھی اپنے حسن کی

    آئینہ دے کے بنتے سنورتے ہوئے بھی دیکھ

    دیکھا نہ ہوگا تو نے مگر انتظار میں

    چلتے ہوئے سمے کو ٹھہرتے ہوئے بھی دیکھ

    تعریف سن کے دوست سے علویؔ تو خوش نہ ہو

    اس کو تری برائیاں کرتے ہوئے بھی دیکھ

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دن اک کے بعد ایک گزرتے ہوئے بھی دیکھ نعمان شوق

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY