غیر کو تم نہ آنکھ بھر دیکھو

میر حسن

غیر کو تم نہ آنکھ بھر دیکھو

میر حسن

MORE BYمیر حسن

    غیر کو تم نہ آنکھ بھر دیکھو

    کیا غضب کرتے ہو ادھر دیکھو

    خاک میں مت ملاؤ دل کو مرے

    جی میں سمجھو ٹک اپنا گھر دیکھو

    دیکھنا زلف و رخ تمہیں ہر وقت

    شام دیکھو نہ تم سحر دیکھو

    گل ہوئے جاتے ہیں چراغ کی طرح

    ہم کو ٹک جلد آن کر دیکھو

    آپ پہ اپنا اختیار نہیں

    جبر ہے ہم پر کس قدر دیکھو

    رام باتوں میں تو وہ ہو نہ سکا

    نقش و افسوں بھی کوئی کر دیکھو

    لخت دل تم نہ سمجھو مژگاں پر

    عاشقی کا یہ ہے ثمر دیکھو

    وصل ہوتا نہیں بھلا کیوں کر

    اپنی ہستی سے تو گزر دیکھو

    دیکھتے ہی نہیں تو کیا کہیے

    کہیے تب حال کچھ اگر دیکھو

    ڈھلتے ہو تم بتاں ادھر دل سے

    آج کل جس کے ہاتھ زر دیکھو

    عشق بازی سے باز آؤ حسنؔ

    چھوڑ دو اپنا یہ ہنر دیکھو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY