ہم بن غم یار بھی جئے ہیں

سید عابد علی عابد

ہم بن غم یار بھی جئے ہیں

سید عابد علی عابد

MORE BYسید عابد علی عابد

    ہم بن غم یار بھی جئے ہیں

    مرنے کے بڑے جتن کئے ہیں

    مخفی تجھ سے بھی ہیں غم یار

    کچھ وار جو دل نے سہہ لیے ہیں

    دل سے بھی چھپا کے ہم نے رکھے

    کچھ چاک جو عمر بھر سئے ہیں

    کچھ خون وفا سے کچھ حنا سے

    کیا رنگ بہار نے لیے ہیں

    افسوس ہماری سخت جانی

    احباب نے بھی گلے کئے ہیں

    گلشن میں عجب ہوا چلی ہے

    پھولوں نے ہونٹ سی لیے ہیں

    دل باختگی و شعر خوانی

    دو کام تو عمر بھر کئے ہیں

    کہتے تھے تجھی کو جان اپنی

    اور تیرے بغیر بھی جئے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY