ہم تو بچپن میں بھی اکیلے تھے

جاوید اختر

ہم تو بچپن میں بھی اکیلے تھے

جاوید اختر

MORE BY جاوید اختر

    ہم تو بچپن میں بھی اکیلے تھے

    صرف دل کی گلی میں کھیلے تھے

    اک طرف مورچے تھے پلکوں کے

    اک طرف آنسوؤں کے ریلے تھے

    تھیں سجی حسرتیں دکانوں پر

    زندگی کے عجیب میلے تھے

    خود کشی کیا دکھوں کا حل بنتی

    موت کے اپنے سو جھمیلے تھے

    ذہن و دل آج بھوکے مرتے ہیں

    ان دنوں ہم نے فاقے جھیلے تھے

    مآخذ:

    • Book : tarkash, (Pg. 44)
    • Author : jaaved aKHtar
    • مطبع : Satar publication (p)ltd (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY