جب سجیلے خرام کرتے ہیں

فائز دہلوی

جب سجیلے خرام کرتے ہیں

فائز دہلوی

MORE BYفائز دہلوی

    جب سجیلے خرام کرتے ہیں

    ہر طرف قتل عام کرتے ہیں

    مکھ دکھا چھب بنا لباس سنوار

    عاشقوں کو غلام کرتے ہیں

    یہ چکورے مل اس سریجن سوں

    رات دن اپنا کام کرتے ہیں

    یار کو عاشقان صاحب فن

    ایک دیکھے میں رام کرتے ہیں

    گردش چشم سوں سریجن سب

    بزم میں کار جام کرتے ہیں

    یہ نہیں نیک طور خوباں کے

    آشنائی کو عام کرتے ہیں

    جی کو کرتے ہیں عاشقاں تسلیم

    جب وہ ہنس کر سلام کرتے ہیں

    مرغ دل کے شکار کرنے کوں

    زلف و کاکل کو دام کرتے ہیں

    شوخ میرا بتاں میں جب جاوے

    اس کو اپنا امام کرتے ہیں

    خوب رو آشنا ہیں فائزؔ کے

    مل سبی رام رام کرتے ہیں

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    جب سجیلے خرام کرتے ہیں فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY