کب تلک یوں دھوپ چھاؤں کا تماشا دیکھنا

انور مسعود

کب تلک یوں دھوپ چھاؤں کا تماشا دیکھنا

انور مسعود

MORE BYانور مسعود

    کب تلک یوں دھوپ چھاؤں کا تماشا دیکھنا

    دھوپ میں پھرنا گھنے پیڑوں کا سایا دیکھنا

    ساتھ اس کے کوئی منظر کوئی پس منظر نہ ہو

    اس طرح میں چاہتا ہوں اس کو تنہا دیکھنا

    رات اپنے دیدۂ گریاں کا نظارہ کیا

    کس سے پوچھیں خواب میں کیسا ہے دریا دیکھنا

    اس گھڑی کچھ سوجھنے دے گی نہ یہ پاگل ہوا

    اک ذرا آندھی گزر جائے تو حلیہ دیکھنا

    کھل کے رو لینے کی فرصت پھر نہ اس کو مل سکی

    آج پھر انورؔ ہنسے گا بے تحاشا دیکھنا

    مآخذ:

    • کتاب : ik daraicha ik chirag (Pg. 42)
    • Author : ANWAR MASOOD
    • مطبع : Dost Publications (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY