کب ضیا بار ترا چہرۂ زیبا ہوگا

انور مسعود

کب ضیا بار ترا چہرۂ زیبا ہوگا

انور مسعود

MORE BYانور مسعود

    کب ضیا بار ترا چہرۂ زیبا ہوگا

    کیا جب آنکھیں نہ رہیں گی تو اجالا ہوگا

    مشغلہ اس نے عجب سونپ دیا ہے یارو

    عمر بھر سوچتے رہیے کہ وہ کیسا ہوگا

    جانے کس رنگ سے روٹھے گی طبیعت اس کی

    جانے کس ڈھنگ سے اب اس کو منانا ہوگا

    اس طرف شہر ادھر ڈوب رہا تھا سورج

    کون سیلاب کے منظر پہ نہ رویا ہوگا

    یہی انداز تجارت ہے تو کل کا تاجر

    برف کے باٹ لیے دھوپ میں بیٹھا ہوگا

    دیکھنا حال ذرا ریت کی دیواروں کا

    جب چلی تیز ہوا ایک تماشا ہوگا

    آستینوں کی چمک نے ہمیں مارا انورؔ

    ہم تو خنجر کو بھی سمجھے ید بیضا ہوگا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    انور مسعود

    انور مسعود

    انور مسعود

    انور مسعود

    مآخذ:

    • کتاب : Ghazal Calendar-2015 (Pg. 10.03.2015)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY