خاک دیکھی ہے شفق زار فلک دیکھا ہے

احمد رضوان

خاک دیکھی ہے شفق زار فلک دیکھا ہے

احمد رضوان

MORE BY احمد رضوان

    خاک دیکھی ہے شفق زار فلک دیکھا ہے

    ظرف بھر تیری تمنا میں بھٹک دیکھا ہے

    ایسا لگتا ہے کوئی دیکھ رہا ہے مجھ کو

    لاکھ اس وہم کو سوچوں سے جھٹک دیکھا ہے

    قدرت ضبط بھی لوگوں کو دکھائی ہم نے

    صورت اشک بھی آنکھوں سے چھلک دیکھا ہے

    جانے تم کون سے منظر میں چھپے بیٹھے ہو

    میری آنکھوں نے بہت دور تلک دیکھا ہے

    رات کا خوف نہیں گھٹتا اندھیرا تو کجا

    سب طرح دار ستاروں نے چمک دیکھا ہے

    ایک مدت سے اسے دیکھ رہا ہوں احمدؔ

    اور لگتا ہے ابھی ایک جھلک دیکھا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY