کوئی دھن ہو میں ترے گیت ہی گائے جاؤں

عبید اللہ علیم

کوئی دھن ہو میں ترے گیت ہی گائے جاؤں

عبید اللہ علیم

MORE BYعبید اللہ علیم

    کوئی دھن ہو میں ترے گیت ہی گائے جاؤں

    درد سینے میں اٹھے شور مچائے جاؤں

    خواب بن کر تو برستا رہے شبنم شبنم

    اور بس میں اسی موسم میں نہائے جاؤں

    تیرے ہی رنگ اترتے چلے جائیں مجھ میں

    خود کو لکھوں تری تصویر بنائے جاؤں

    جس کو ملنا نہیں پھر اس سے محبت کیسی

    سوچتا جاؤں مگر دل میں بسائے جاؤں

    اب تو اس کی ہوئی جس پہ مجھے پیار آتا ہے

    زندگی آ تجھے سینے سے لگائے جاؤں

    یہی چہرے مرے ہونے کی گواہی دیں گے

    ہر نئے حرف میں جاں اپنی سمائے جاؤں

    جان تو چیز ہے کیا رشتۂ جاں سے آگے

    کوئی آواز دئیے جائے میں آئے جاؤں

    شاید اس راہ پہ کچھ اور بھی راہی آئیں

    دھوپ میں چلتا رہوں سائے بچھائے جاؤں

    اہل دل ہوں گے تو سمجھیں گے سخن کو میرے

    بزم میں آ ہی گیا ہوں تو سنائے جاؤں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    رنا لیلیٰ

    رنا لیلیٰ

    عبید اللہ علیم

    عبید اللہ علیم

    مآخذ
    • کتاب : Chand Chehra Sitara Aankhen (Pg. 27)

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY