لے چلا پھر مجھے دل یار دل آزار کے پاس

مبارک عظیم آبادی

لے چلا پھر مجھے دل یار دل آزار کے پاس

مبارک عظیم آبادی

MORE BYمبارک عظیم آبادی

    لے چلا پھر مجھے دل یار دل آزار کے پاس

    اب کے چھوڑ آؤں گا ظالم کو ستم گار کے پاس

    میں تو ہر ہر خم گیسو کی تلاشی لوں گا

    کہ مرا دل ہے ترے گیسوئے خم دار کے پاس

    تو تو احسان جتاتی ہوئی آتی ہے صبا

    یوں بھی آتا ہے کوئی مرغ گرفتار کے پاس

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY