محروم طرب ہے دل دلگیر ابھی تک

حسرتؔ موہانی

محروم طرب ہے دل دلگیر ابھی تک

حسرتؔ موہانی

MORE BYحسرتؔ موہانی

    محروم طرب ہے دل دلگیر ابھی تک

    باقی ہے ترے عشق کی تاثیر ابھی تک

    وصل اس بت بد خو کا میسر نہیں ہوتا

    وابستۂ تقدیر ہے تدبیر ابھی تک

    اک بار سنی تھی سو مرے دل میں ہے موجود

    اے جان تمنا تری تقریر ابھی تک

    سیکھی تھی جو آغاز محبت میں قلم نے

    باقی ہے وہ رنگینئ تحریر ابھی تک

    اس درجہ نہ بیتاب ہو اے شوق شہادت

    ہے میان میں اس شوخ کی شمشیر ابھی تک

    کہنے کو تو میں بھول گیا ہوں مگر اے یار

    ہے خانۂ دل میں تری تصویر ابھی تک

    بھولی نہیں دل کو تری دزدیدہ نگاہی

    پہلو میں ہے کچھ کچھ خلش تیر ابھی تک

    تھے حق پہ وہ بے شک کہ نہ ہوتے تو نہ ہوتا

    دنیا میں بپا ماتم شبیرؔ ابھی تک

    گزرے بہت استاد مگر رنگ اثر میں

    بے مثل ہے حسرتؔ سخن میرؔ ابھی تک

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    محروم طرب ہے دل دلگیر ابھی تک نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY