پیچ بھایا مجھ کو تجھ دستار کا

فائز دہلوی

پیچ بھایا مجھ کو تجھ دستار کا

فائز دہلوی

MORE BYفائز دہلوی

    پیچ بھایا مجھ کو تجھ دستار کا

    بند ہے دل طرۂ زرتار کا

    جی پھنسا ہے جا کے اس زلفوں کے بیچ

    دل شہید اس نرگس بیمار کا

    پیچ میں ہوں تیرے ڈھیلے پیچ سوں

    محو ہوں اس چیرۂ زرتار کا

    تجھ کو ہے ہم سے جدائی آرزو

    میرے دل میں شوق ہے دیدار کا

    کیوں نہ باندھے دل کو فائزؔ زلف سوں

    شوق ہے کافر کے تیں زنار کا

    مآخذ:

    • کتاب : Intekhab Kalam (Pg. 38)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY