رات آنگن میں چاند اترا تھا

اطہر نادر

رات آنگن میں چاند اترا تھا

اطہر نادر

MORE BYاطہر نادر

    رات آنگن میں چاند اترا تھا

    تم ملے تھے کہ خواب دیکھا تھا

    اب کہ خود ہیں حصار ذات میں بند

    ورنہ اپنا بھی زور چلتا تھا

    شیشۂ دل پہ ایسی چوٹ پڑی

    ایک لمحے میں ریزہ ریزہ تھا

    اس کے کوچے کے ہو لیے ورنہ

    راستہ ہر طرف نکلتا تھا

    رت جو بدلی تو یہ بھی دیکھ لیا

    پتہ پتہ زمیں پہ بکھرا تھا

    ایک خوشبو ہے جانی پہچانی

    اس خرابے میں کون رہتا ہے

    موم کی طرح وہ پگھل سا گیا

    وہ جو پتھر کی طرح لگتا تھا

    اب کہ سنتے نہیں ہو بات مگر

    پھر کہو گے کہ کوئی کہتا تھا

    رات سنسان تھی مگر نادرؔ

    حشر سا دل میں ایک برپا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY