رنگ بدلا یار نے وہ پیار کی باتیں گئیں

حفیظ جالندھری

رنگ بدلا یار نے وہ پیار کی باتیں گئیں

حفیظ جالندھری

MORE BYحفیظ جالندھری

    رنگ بدلا یار نے وہ پیار کی باتیں گئیں

    وہ ملاقاتیں گئیں وہ چاندنی راتیں گئیں

    پی تو لیتا ہوں مگر پینے کی وہ باتیں گئیں

    وہ جوانی وہ سیہ مستی وہ برساتیں گئیں

    اللہ اللہ کہہ کے بس اک آہ کرنا رہ گیا

    وہ نمازیں وہ دعائیں وہ مناجاتیں گئیں

    حضرت دل اب نئی الفت سمجھ کر سوچ کر

    اگلی باتوں پر نہ بھولیں آپ وہ باتیں گئیں

    راہ و رسم دوستی قائم تو ہے لیکن حفیظؔ

    ابتدائے شوق کی لمبی ملاقاتیں گئیں

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Hafeez Jalandhari (Pg. 146)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY