روشنی سی کبھی کبھی دل میں (ردیف .. ے)

حفیظ ہوشیارپوری

روشنی سی کبھی کبھی دل میں (ردیف .. ے)

حفیظ ہوشیارپوری

MORE BYحفیظ ہوشیارپوری

    روشنی سی کبھی کبھی دل میں

    منزل بے نشاں سے آتی ہے

    لوٹ کر نور کی کرن جیسے

    سفر لا مکاں سے آتی ہے

    نوع انساں ہے گوش بر آواز

    کیا خبر کس جہاں سے آتی ہے

    اپنی فریاد بازگشت نہ ہو

    اک صدا آسماں سے آتی ہے

    تختۂ دار ہے کہ تختۂ گل

    بوئے خوں گلستاں سے آتی ہے

    دل سے آتی ہے بات لب پہ حفیظؔ

    بات دل میں کہاں سے آتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY