سچ کہاں کہتا ہے جانے والا

محمد علوی

سچ کہاں کہتا ہے جانے والا

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    سچ کہاں کہتا ہے جانے والا

    خوب پچھتائے گا آنے والا

    رات اور دن کا تسلسل کیا ہے

    ایک چکر ہے تھکانے والا

    مطمئن ہے وہ بنا کر دنیا

    کون ہوتا ہوں میں ڈھانے والا

    صبح سے کھود رہا ہوں گھر کو

    خواب دیکھا ہے خزانے والا

    تھک گیا تھا تو ذرا رک جاتا

    میری تصویر بنانے والا

    دل میں اس درجہ خموشی کیوں ہے

    کیا ہوا شور مچانے والا

    شرم سے ڈوب مرے گا علویؔ

    خوش کہاں ہوگا ستانے والا

    مآخذ:

    • کتاب : Raat Idhar Udhar Rooshan (Pg. 496)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY