شب سیاہ سے نکلے گا ماہتاب کوئی

خلیل مامون

شب سیاہ سے نکلے گا ماہتاب کوئی

خلیل مامون

MORE BYخلیل مامون

    شب سیاہ سے نکلے گا ماہتاب کوئی

    افق میں دیکھتے رہیے گا روز خواب کوئی

    جواب ڈھونڈ کے سارے جہاں سے جب لوٹے

    ہمیں تو کر گیا یک لخت لا جواب کوئی

    چمن سے نکلے ہیں اک پھول توڑ کر ہم بھی

    لہولہان سے ہاتھوں میں ہے گلاب کوئی

    ملیں تو کیسے ملیں جائیں تو کہاں جائیں

    کہ کر رہا ہے بہت ہم سے اجتناب کوئی

    بکھیرتے ہوئے سونا زمیں میں چاروں طرف

    ابھر رہا ہے سمندر سے آفتاب کوئی

    مامونؔ چاروں طرف میرے اب اندھیرا ہے

    ابھر کے ڈوب گیا مجھ میں آفتاب کوئی

    مآخذ:

    • کتاب : Sanson Ke Paar (Pg. 187)
    • Author : Khalil Mamoon
    • مطبع : Educational Publishing House, Delhi (2015)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY