اسے دیکھ کر اپنا محبوب پیارا بہت یاد آیا

عبد الحمید

اسے دیکھ کر اپنا محبوب پیارا بہت یاد آیا

عبد الحمید

MORE BYعبد الحمید

    اسے دیکھ کر اپنا محبوب پیارا بہت یاد آیا

    وہ جگنو تھا اس سے ہمیں اک ستارہ بہت یاد آیا

    یہی شام کا وقت تھا گھر سے نکلے کہ یاد آ گیا تھا

    بہت دن ہوئے آج وہ سب دوبارہ بہت یاد آیا

    سحر جب ہوئی تو بہت خامشی تھی زمیں شبنمی تھی

    کبھی خاک دل میں تھا کوئی شرارہ بہت یاد آیا

    برستے تھے بادل دھواں پھیلتا تھا عجب چار جانب

    فضا کھل اٹھی تو سراپا تمہارا بہت یاد آیا

    کبھی اس کے بارے میں سوچا نہ تھا اور سوچا تو دیکھو

    سمندر کوئی بے صدا بے کنارہ بہت یاد آیا

    RECITATIONS

    عبد الحمید

    عبد الحمید

    عبد الحمید

    اسے دیکھ کر اپنا محبوب پیارا بہت یاد آیا عبد الحمید

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY