وہ بھی کیا دن تھے کیا زمانے تھے

اختر رضا سلیمی

وہ بھی کیا دن تھے کیا زمانے تھے

اختر رضا سلیمی

MORE BYاختر رضا سلیمی

    وہ بھی کیا دن تھے کیا زمانے تھے

    روز اک خواب دیکھ لیتے تھے

    اب زمیں بھی جگہ نہیں دیتی

    ہم کبھی آسماں پہ رہتے تھے

    آخرش خود تک آن پہنچے ہیں

    جو تری جستجو میں نکلے تھے

    خواب گلیوں میں پھر رہے تھے اور

    لوگ اپنے گھروں میں سوئے تھے

    ہم کہیں دور تھے بہت ہی دور

    اور ترے آس پاس بیٹھے تھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY