وہ ہم نہیں جنہیں سہنا یہ جبر آ جاتا

پروین شاکر

وہ ہم نہیں جنہیں سہنا یہ جبر آ جاتا

پروین شاکر

MORE BYپروین شاکر

    وہ ہم نہیں جنہیں سہنا یہ جبر آ جاتا

    تری جدائی میں کس طرح صبر آ جاتا

    فصیلیں توڑ نہ دیتے جو اب کے اہل قفس

    تو اور طرح کا اعلان جبر آ جاتا

    وہ فاصلہ تھا دعا اور مستجابی میں

    کہ دھوپ مانگنے جاتے تو ابر آ جاتا

    وہ مجھ کو چھوڑ کے جس آدمی کے پاس گیا

    برابری کا بھی ہوتا تو صبر آ جاتا

    وزیر و شاہ بھی خس خانوں سے نکل آتے

    اگر گمان میں انگار قبر آ جاتا

    مأخذ :
    • کتاب : kulliyaat-e-maahtmaam -inkaar (Pg. 57)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY