وہ میرا یار تھا مجھ کو نہ یہ خیال آیا

اظہر عنایتی

وہ میرا یار تھا مجھ کو نہ یہ خیال آیا

اظہر عنایتی

MORE BYاظہر عنایتی

    وہ میرا یار تھا مجھ کو نہ یہ خیال آیا

    میں اپنے ذہن کا سب بوجھ اس پہ ڈال آیا

    اب اس کے پاس کوئی سنگ پھینکنے کو نہیں

    فضا میں آخری پتھر بھی وہ اچھال آیا

    تمام بھیڑ میں اک میں ہی پر سکوں تھا بہت

    تمام بھیڑ کو مجھ پر ہی اشتعال آیا

    عجب جنون ہے یہ انتقام کا جذبہ

    شکست کھا کے وہ پانی میں زہر ڈال آیا

    کل اپنے آپ سے جب لڑتے لڑتے ہار گیا

    تو ایک شخص کا پھر دیر تک خیال آیا

    وہ بے سبب ہی خفا تھا مگر میں آج اظہرؔ

    گلے میں اس کے بھی بانہوں کا ہار ڈال آیا

    مأخذ :
    • کتاب : jhunka na-e-mausam kaa (Pg. 173)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY