पुस्तक: परिचय

परिचय

شکیل بدایونی،اردو غزل کے وہ مقبول شاعر ہیں، جنہیں "شاعر شباب"کے لقب سے نوازا گیا۔وہ ایک ایسے ممتاز شاعر تھے جنھوں نے ایک ہی وقت مین غزل کو نکھارا اور نغمات کی دنیا میں نیا رنگ پیش کیا۔ جگر مرادآبادی اور فراق گورکھ پوری کے بعد واحد شاعر تھے جنھوں نے اپنے فن کے لیے غزل کے میدان کو اپنایا ،اور اسے زندگی کے بدلتے ہوئے رجحانات اور جدید تصورات سے ہم کنار کیا۔پورے ہندوستان میں ان کی غزلوں کی دھوم تھی، بڑے بڑے مشاعروں میں شکیل بدایونی کا نام ہونا ضرور سمجھا جاتاتھا، اور وہی مشاعرہ کامیاب سمجھا جاتا تھا جس میں شکیل بدایونی کی شرکت ہوتی تھی۔یہ حقیقت ہے کہ شکیل بدایونی کا اردو ادب پر بہت بڑا احسان ہے، انھوں نے اپنے نغمات کے سہارے اردو ادب کو ہندوستان کے کونے کونے پہنچایا، انھوں نے اپنے دور کی مکمل ترجمانی کی ۔اپنی غزلیات میں منظومات میں اور جب موقع ملا تو نغمات بھی لکھے اور اپنے نغمات میں خلوص و محبت کا پیغام بھی دیا اور سماج کو سدھارنے کا طریقہ بھی بتایا ۔زیر نظر کتاب شکیل بدایونی کا کیات ہے ،اس کلیات میں ان کے شعری مجموعے "رعنائیاں "،"صنم و حرم"،"شبستان"اور "رنگینیاں" نغمہ فردوس اور دھرتی کو آکاش پکارے" شامل ہیں۔ اس کلیات کو ایجوکیشنل پبلشنگ ہاوس نے چھاپا ہے۔ کلیات کے شروع میں رئیس المتغزلین جگر مرادآبادی کے علاوہ دلیپ کمار، ساحر لدھیانوی اور فراق گورکھپوی جیسے بڑے لوگوں کے مضامین و خیالات شامل ہیں۔ نیز شکیل کی خودنوشت سوانح کے بھی کچھ اوراق شامل ہیں جو بہت دل چسپ ہیں۔ ان سب کو پڑھ کر شکیل کی شخصیت اور شاعرانہ عظمت کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक: परिचय

शकील बदायुनी

शकील बदायुनी

अपनेफ़िल्मीगीतोंकीदिलकशीसेउर्दूशाइ’रीकोलोकप्रियबनानेवालेग़ज़ल-शाइ’र।अदबीशाइ’रीभीकी।बदायूँ(उत्तरप्रदेश) मेंजन्म।अ’लीगढ़मुस्लिमयुनिवर्सिटीसेग्रैजुएशनकिया।कईसालदेहलीमेंसरकारीनौकरीमेंरहेऔरमुशाइ’रोंमेंभीशरीकहोतेरहे।1946 मेंएकमुशाइ’रेकेलिएमुंबईगएऔरफिरबाक़ीउ’म्रवहींगुज़ारदी।


.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम