masnawi sahr-ul-bayan

Meer Hasan

Uttar Pradesh Urdu Academy, Lucknow
2010 | More Info

About The Book

Description

سادہ بیانی، جذبات نگاری اور جزئیات کی عکاسی اس مثنوی کی اہم خصوصیات ہیں۔ یہ میر حسن اور اردو ادب کی معرکۃ الآرا مثنوی ہے۔ مثنوی کا آغاز حمد و نعت اور منقبت سے ہوتا ہےاور اس کے بعد شاہ عالم ثانی کی طرف مراجعت کرتے ہیں۔ اس کے فورا بعد آصف الدولہ کی تعریف شروع کر دیتے ہیں چونکہ اپنی دوسری مثنوی میں فیض آباد کے مقابلہ میں لکھنو کی بہت بری صورت پیش کرنے کی وجہ سے جلا وطن کر دئے جاتے ہیں اس لئے بادشاہ کو خوش کرنے کے لئے بیہ آصف الدولہ کی تعریف ضروری تھی اور یہ مثنوی لکھی ہی اسی مقصد سے گئی تھی اسی لئے جب یہ مثوی لکھ کر آصف الدولہ کو پیش کی گئی تب ہی ان کو دوبارہ لکھنو آنے کی اجازت مل سکی اور صلہ میں آصف الدولہ کے دست خاص سے ایک دوشالہ عنایت کیا گیا ۔ انہوں نےاس میں اپنی بھرپور صلاحیتوں کا استعمال کرتے ہیں اور اس کے بعد قصہ کا آغاز ہوتا ہے۔ مثنوی لکھنو کی تہذیب و ثقافت کی سانجھی وراثت سے مملو ہے۔ اس کا ہر شعر اہل مذاق کے دلوں کو لبھانے کے لئے موہنی منتر ہےاور اس کی ہر داستان سحر سامری کا ایک دفتر۔ مثنوی کے شروع میں تنقیدی جائزہ بھی لیا گیا ہے۔

.....Read more

About The Author

Meer Hasan

Meer Hasan

Meer Hasan Dehlavi is considered to be the foremost poet of mathnawi. He also practised other poetical forms but his fame rests primarily on his mathnawi entitled Sehr-ul-Bayan

In his Tazkira-i-Shuara-i-Urdu, Meer Hasan has recorded his name as Meer Ghulam Hasan. He used Hasan as his nom de plume. There is a difference of opinion about his date of birth. According to Qazi Abdul Wadood, he was born in 1717 but Malik Ram in his Tazkira-i-Maah-o-Saal has recorded 1740-41 as the year of his birth. Meer Hasan was born in the locality of Syed Wada in the walled city of Delhi. Because of the deteriorating condition of Delhi, he migrated to Awadh with his father, Meer Ghulam Hussain Zahik. Mus’hafi has related that Meer Hasan was only twelve years old at the time of his migration. After migration, he stayed in Faizabad where he got associated with the estate of Nawab Sarfaraz Jung, son of Nawab Nawab Salar Jung. When the capital shifted from Faizabad to Lucknow in 1775, he also shifted to Lucknow where he ultimately died. 

.....Read more

More From Author

See More

Popular And Trending Read

See More

EXPLORE BOOKS BY

Book Categories

Books on Poetry

Magazines

Index of Books

Index of Authors

University Urdu Syllabus