sone chandi ke but

ख़्वाजा अहमद अब्बास

नेशनल फ़ाइन प्रिंटिंग प्रेस, हैदराबाद
1986 | अन्य

पुस्तक: परिचय

परिचय

خواجہ احمد عباس اردو کے مشہور افسانہ نگار، فلمی ہدایتکار ، صحافی اور فلمی کہانی کار تھے۔ ان کے متعدد افسانوی مجموعے شائع ہو چکے ہیں اور کئی فلموں کے اسکرپٹ رائٹر اور ڈائریکٹر بھی رہے۔ زیر نظر کتاب میں انہوں نے فلمی دنیا کا جائزہ لیا ہے۔ کتاب تین حصوں میں منقسم ہے۔ پہلے حصے میں چھ مضامین شامل کیے گئے ہیں ، ان میں فلمی سماج، فلمی تجربے اور نئی فلم نئے انداز جیسے موضوعات پر بحث ہوئی ہے۔ دوسرا حصہ "فن اور فنکار " کے بارے میں ہے۔ اس میں قد آور فنکاروں کے فن پر بات ہوئی ہے۔ ان میں پرتھوی راج کپور، دلیپ کمار ، مینا کماری وغیرہ جیسے فنکار شامل ہیں اور تیسرے حصے میں کہانیاں ہیں۔ کل ۹ کہانیاں شامل کرکے ان پر تبصرہ ہوا ہے۔ آج ہم جسے فلم انڈسٹری کے نام سے جانتے ہیں ، مصنف اس کے سخت مخالف تھے۔ ان کا ماننا تھا کہ فلم کوئی فولاد کا کارخانہ نہیں ہے کہ اسے انڈسٹری کہا جائے ،یہ تو ایک آرٹ ہے ایک فن ہے ، ایک سائنس ہے جس میں مختلف قسم کے آرٹسٹ مل کر کام کرتے ہیں۔ اس کتاب میں فلمی دنیا سے متعلق ایک خاص نقشہ سامنے آئے گا جس میں کامیاب اور ناکامیاب فنکار اور پرانے تخلیق کار اور اُس دور کے نئے چہرے سب ہی نظر آئیں گے ۔ کتاب کے مطالعہ کے بعد فلمی دنیا کے بارے میں بہت کچھ سامنے آتا ہے جوشاید پہلے قاری کے وھم و گمان میں بھی نہ ہو۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम