tasawwur-e-ishq aur meer ki shairi

ज़फ़र अंसारी ज़फ़र

ज़फ़र अंसारी ज़फ़र
2012 | अन्य

पुस्तक: परिचय

परिचय

ظفر انصاری شاعر و تنقید نگار ہیں ۔زیر نظر کتاب "تصور عشق او رمیر کی شاعری "ان کا علمی ،ادبی اورتحقیقی کارنامہ ہے۔میرؔ کی شاعری کا محور عشق ہی ہے ۔ان کا محبوب موضوع بھی عشق ہے۔ان کی شاعری میں عشق کے مختلف و متنوع رنگ ملتے ہیں۔وہ زندگی کے تمام مسائل کاحل عشق ہی میں ڈھونڈتے ہیں۔ان کی شاعری میں عشق کا اظہار جس سلیقے سے ہوا ہے وہ دیگر شعرا کے یہاں مفقود ہے۔زیر نظر کتاب میر کے کلام میں "تصور عشق" کاجائزہ ہے۔مصنف نے اپنے مقدمے میں جہاں کتاب کی خصوصیات ،فکری نکات اور اہم محرکات کے اشارے دیئے ہیں وہیں میرؔ کے احوال و آثار مرتب کر کے وہ پس منظربھی فراہم کردیا ہے جس کے معنوی ،فکری اور فنی تناظر میں میرؔ کے تصور عشق کا ان کے سرمایہ ء غزل اور مثنوی کے حوالے سے تجزیہ آسان ہو سکے۔اس کے علاوہ مصنف نے " عشق کا تصور" کے تحت مختلف ذیلی عناوین جیسےعشق کے معانی ،مفاہیم ،اقسام ،تدریجی ارتقائی صورت حال اور عشق کے مختلف مکاتب فکر کو پیش نظر رکھتے ہوئے میرؔ کے تصور عشق کے امتیازات و اختصاصات درج کیے ہیں۔مصنف نے جہاں مختلف لغات کے حوالے سے " عشق " کے معانی و مفاہیم کی وضاحت کے ساتھ مختلف مکاتب فکر کےحوالے سے عشق کے تصورات پر تفصیلی بحث بھی کی ہے وہیں میر کی غزلوں میں عشق کے تصور سے بحث کرتے ہوئے حسن و عشق کے مسائل و معاملات او رواردات قلب کے اظہار کے لیے غزل کو سب سے کار آمد صنف قرار دیا ہے اور دوسرے لفظوں میں عشق اور صنف غزل کو لازم و ملزوم قرار دیاہے۔ میر کی عصری معنویت کے ساتھ ساتھ اردو کی فکری ،ادبی اور تحقیقی روایت میں بھی ظفر کی یہ تصنیف نہ صرف افادیت کے پہلو سے بہرومند ہے بلکہ اضافے کی حیثیت رکھتی ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम