उर्दू अदब की मुख़्तसर तरीन तारीख़

सलीम अख़्तर

किताबी दुनिया, दिल्ली
2005 | अन्य
  • सहयोगी

    हैदर अली

  • श्रेणियाँ

    भाषा एवं साहित्य, पाठ्य पुस्तक

  • पृष्ठ

    721

पुस्तक: परिचय

परिचय

یہ وہ کتاب ہے جس کے بارے میں انتظار حسین نے فرمایا تھا کہ "اردو ادب کی تاریخ کیا لکھی ہے چاول پر قل ھو اللہ تحریر کی ہے۔" اس کتاب کی جامعیت کا اندازہ اس طرح بھی لگایا جا سکتا ہیکہ یہ کتاب بہت سی یونورسٹیز میں نصاب کی طرح بھی پڑھائی گئی۔کتاب اردو ادب کی عمومی تاریخ پر مبنی ہے۔ جس میں اردو زبان و ادب کے اس دور سے ابتدا کی گئی ہے جب وہ گہوارہ میں تھی اور خود نہ بول سکتی تھی اور نہ ہی خود قدم بڑھا سکتی تھی اور اس وقت تک اس کا کوئی نام بھی تجویز نہ کیا گیا تھا۔اسی لئے کوئی اسے ہندوی کوئی ریختہ،کوئی اردو معلی تو کوئی کسی اور نام سے پکارتا تھا۔ اس کے بعد اس کی ابتداء کے بارے میں بحث کی گئی ہے اور پھر اردو جنوب ہند اور شمال ہند میں کس طرح پروان چڑھی اس پر گفتگو کی گئی ہے، نیز دبستان لکھنو ، دہلی کا ذکر کیا گیا۔ اس کے بعد فورٹ ولیم کالج کا قیام اور سرسید تحریک اس کے بعد مرثیہ، ڈرامہ کو جگہ دی گئی ہے۔ اس کے بعد ترقی پسند تحریک پھر سب سے آخر میں معاصر ادبیات و ادیبوں کے بارے میں بیان کیا گیا ہے۔ یہ کتاب تحقیقی و انتقادی پہلو لئے ہوئے ہے۔ اسی لئے اس کتاب کو اتنی زیادہ شہرت حاصل ہوئی۔ اردو ادب کی تاریخ کا مطالعہ کرنے والے اشخاص اس کتاب کو ضرور پڑھنا چاہینگے۔ زیر نظر کتاب کا یہ ایڈیشن نظر ثانی اور اضافہ شدہ ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम