urdu masnavi ka irtiqa

सय्यद मोहम्मद अक़ील

उत्तर प्रदेश उर्दू अकेडमी, लखनऊ
1983 | अन्य

पुस्तक: परिचय

परिचय

اس کتاب کے مصنف کا شمار عہد حاضر کے سربرآوردہ نقادوں میں ہوتا ہے ۔ ان کی یہ کتاب ۱۹۶۵ میں شائع ہوئی تھی اور اعلیٰ تعلیم کے مختلف نصاب میں اس کا مطالعہ لازمی تھا۔اس میں شمالی ہند میں ۱۷۵۰ سے ۱۹۵۰ تک کی مثنویات کو شامل کیا گیا ہے۔ دراصل یہ ایک مقالہ ہے جو کہ پی ایچ ڈی کی ڈگری کے لئے لکھا گیا تھا ۔ کتاب میں تمام اردو مثنویات کو شامل کرنا مشکل تھا لہٰذا آخر میں دو ضمیمے شامل کرکے بقیہ مثنویات کی فہرست اور مختصر تفصیلات پیش کردی گئی ہیں۔ کتاب میں کل آٹھ ابواب، اختتامیہ اور کتابیات و ضمیمہ ہیں۔ پہلے باب میں مثنوی کی تعریف، خوبیاں و خرابیاں اور مثنوی کے دوسرے ہم پلہ اصناف سخن پر بات ہوئی ہے۔ دوسرے باب میں فارسی و اردو مثنوی کی تاریخ کے علاوہ دیگر متعدد متعلقہ موضوعات پر بحث کی گئی ہے۔ تیسرے باب میں دبستان لکھنو کی مثنیویاں و سیاسی و سماجی پس منظر و دیگر موضوعات ، چوتھے باب میں مثنوی دور جدید میں ، پانچویں باب میں مثنوی میں مقامی رنگ ، چھٹے باب میں مثنوی اور نیچر ، ساتویں باب میں مثنوی مین کردار نگاری اور آٹھویں باب میں مثنوی میں فوق الفطرت عناصر پر روشنی ڈالی گئی ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम