آپ کو اپنا بناتے ہوئے ڈر لگتا ہے

انور تاباں

آپ کو اپنا بناتے ہوئے ڈر لگتا ہے

انور تاباں

MORE BYانور تاباں

    آپ کو اپنا بناتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    دل کی دنیا بھی بساتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    لگ نہ جائے کہیں ان پھولوں کو دنیا کی نظر

    داغ دل اپنے دکھاتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    ہو نہ جائے کہیں ہنگامۂ محشر برپا

    اپنی روداد سناتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    تپش حسن نہ پروانہ بنا دے مجھ کو

    اس کے نزدیک بھی جاتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    غرق ہو جائے نہ دنیائے تصور اپنی

    اشک غم آنکھ میں لاتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    شغل تھا دشت نوردی کا کبھی اے تاباںؔ

    اب گلستاں میں بھی جاتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY