اب کیا بتائیں ٹوٹے ہیں کتنے کہاں سے ہم

راجیش ریڈی

اب کیا بتائیں ٹوٹے ہیں کتنے کہاں سے ہم

راجیش ریڈی

MORE BY راجیش ریڈی

    اب کیا بتائیں ٹوٹے ہیں کتنے کہاں سے ہم

    خود کو سمیٹتے ہیں یہاں سے وہاں سے ہم

    کیا جانے کس جہاں میں ملے گا ہمیں سکون

    ناراض ہیں زمیں سے خفا آسماں سے ہم

    اب تو سراب ہی سے بجھانے لگے ہیں پیاس

    لینے لگے ہیں کام یقیں کا گماں سے ہم

    لیکن ہماری آنکھوں نے کچھ اور کہہ دیا

    کچھ اور کہتے رہ گئے اپنی زباں سے ہم

    آئینے سے الجھتا ہے جب بھی ہمارا عکس

    ہٹ جاتے ہیں بچا کے نظر درمیاں سے ہم

    ملتے نہیں ہیں اپنی کہانی میں ہم کہیں

    غائب ہوئے ہیں جب سے تری داستاں سے ہم

    غم بک رہے تھے میلے میں خوشیوں کے نام پر

    مایوس ہو کے لوٹے ہیں ہر اک دکاں سے ہم

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    راجیش ریڈی

    راجیش ریڈی

    RECITATIONS

    راجیش ریڈی

    راجیش ریڈی

    راجیش ریڈی

    اب کیا بتائیں ٹوٹے ہیں کتنے کہاں سے ہم راجیش ریڈی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY