اب یہ عالم ہے کہ غم کی بھی خبر ہوتی نہیں

قابل اجمیری

اب یہ عالم ہے کہ غم کی بھی خبر ہوتی نہیں

قابل اجمیری

MORE BYقابل اجمیری

    اب یہ عالم ہے کہ غم کی بھی خبر ہوتی نہیں

    اشک بہہ جاتے ہیں لیکن آنکھ تر ہوتی نہیں

    پھر کوئی کم بخت کشتی نذر طوفاں ہو گئی

    ورنہ ساحل پر اداسی اس قدر ہوتی نہیں

    تیرا انداز تغافل ہے جنوں میں آج کل

    چاک کر لیتا ہوں دامن اور خبر ہوتی نہیں

    ہائے کس عالم میں چھوڑا ہے تمہارے غم نے ساتھ

    جب قضا بھی زندگی کی چارہ گر ہوتی نہیں

    رنگ محفل چاہتا ہے اک مکمل انقلاب

    چند شمعوں کے بھڑکنے سے سحر ہوتی نہیں

    اضطراب دل سے قابلؔ وہ نگاہ بے نیاز

    بے خبر معلوم ہوتی ہے مگر ہوتی نہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    بھارتی وشوناتھن

    بھارتی وشوناتھن

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اب یہ عالم ہے کہ غم کی بھی خبر ہوتی نہیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY