بہ وقت شام امیدوں کا ڈھل گیا سورج

قمر عباس قمر

بہ وقت شام امیدوں کا ڈھل گیا سورج

قمر عباس قمر

MORE BYقمر عباس قمر

    بہ وقت شام امیدوں کا ڈھل گیا سورج

    حد نگاہ سے آگے نکل گیا سورج

    یہ شرق و غرب ہماری نظر کے ہیں آفاق

    نظر جو بدلی تو کتنا بدل گیا سورج

    ٹھٹھرتی رات کے پہلو میں آ کے بیٹھا تھا

    مرے نفس سے ملا اور جل گیا سورج

    عجیب کرب ہے دل کے ہر اک گوشے میں

    مرے وجود میں گویا پگھل گیا سورج

    ہوس کے شوق میں اترا تمازتیں لے کر

    زمیں کی گود میں شعلے اگل گیا سورج

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY