بڑے ہی ناز سے لایا گیا ہوں

عبید الرحمان

بڑے ہی ناز سے لایا گیا ہوں

عبید الرحمان

MORE BYعبید الرحمان

    بڑے ہی ناز سے لایا گیا ہوں

    میں کاندھا دے کر اٹھوایا گیا ہوں

    فرشتو یوں نہ مجھ سے پیش آؤ

    سندیسہ بھیج بلوایا گیا ہوں

    خبر جس کی تھی وہ سارے مناظر

    قریب مرگ دکھلایا گیا ہوں

    گنوائی زندگی کی صبح کیسے

    بہ وقت شام بتلایا گیا ہوں

    جہاں سے پائی ہے سب نے فضیلت

    اسی کوچے سے میں آیا گیا ہوں

    ملے بھر بھر کے سب کو جام لیکن

    میں اک قطرے کو ترسایا گیا ہوں

    بظاہر تو گرائی اک عمارت

    درون ذات میں ڈھایا گیا ہوں

    عبیدؔ اس بات کی مجھ کو خوشی ہے

    میں دنیا سے الگ پایا گیا ہوں

    مآخذ :
    • کتاب : Soch Abshar (Poetry) (Pg. 83)
    • Author : Obaidur Rahman
    • مطبع : Sehla Obaid (2007)
    • اشاعت : 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY