چاند کا پتھر باندھ کے تن سے اتری منظر خواب میں چپ

عباس تابش

چاند کا پتھر باندھ کے تن سے اتری منظر خواب میں چپ

عباس تابش

MORE BY عباس تابش

    چاند کا پتھر باندھ کے تن سے اتری منظر خواب میں چپ

    چڑیاں دور سدھار گئیں اور ڈوب گئی تالاب میں چپ

    لفظوں کے بٹوارے میں اس چیخ بھرے گہوارے میں

    بول تو ہم بھی سکتے ہیں پر شامل ہے آداب میں چپ

    پہلے تو چوپال میں اپنا جسم چٹختا رہتا تھا

    چل نکلی جب بات سفر کی پھیل گئی اعصاب میں چپ

    اب تو ہم یوں رہتے ہیں اس ہجر بھرے ویرانے میں

    جیسے آنکھ میں آنسو گم ہو جیسے حرف کتاب میں چپ

    اپنی آہٹ کو بھی اپنے ساتھ نہیں لے جاتے وہ

    تیری راہ پہ چلنے والے رکھتے ہیں اسباب میں چپ

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY