چھپانا بھی جو تم چاہو محبت چھپ نہ پائے گی

نوید انجم

چھپانا بھی جو تم چاہو محبت چھپ نہ پائے گی

نوید انجم

MORE BYنوید انجم

    چھپانا بھی جو تم چاہو محبت چھپ نہ پائے گی

    دیا دل میں جلے گا اور چمک چہرے پہ آئے گی

    حدود انکساری سے بھی ہم آگے نکل آئے

    اگر تم اور کھینچو گے تو رسی ٹوٹ جائے گی

    سماعت میں تو اپنی قوت احساس پیدا کر

    مرے دل کے تڑپنے کی تجھے آواز آئے گی

    ضرورت کو جکڑ کر صبر کی زنجیر میں رکھنا

    نہیں تو بھوک خودداری کو اک دن بیچ کھائے گی

    تو اپنے اپ کو سورج بنا کر پیش کر پہلے

    بس اک میں ہی نہیں دنیا ترے چکر لگائے گی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY