دھوپ بھی چاندنی ہے سایۂ اشجار سے دیکھ

شاذ تمکنت

دھوپ بھی چاندنی ہے سایۂ اشجار سے دیکھ

شاذ تمکنت

MORE BYشاذ تمکنت

    دھوپ بھی چاندنی ہے سایۂ اشجار سے دیکھ

    کوئی بازار سہی چشم خریدار سے دیکھ

    دائرے قوسیں خط رنگ بیاض دل پر

    روز اک عالم نو ہے تری رفتار سے دیکھ

    جاگتے سوتے جزیروں کے دھندلکے میں بلا

    پھر اسی طرح مجھے پردۂ انکار سے دیکھ

    پھر سزاوار ہے تجھ کو مرے ہر عیب سے پیار

    پہلے تو میرا ہنر دیدۂ اغیار سے دیکھ

    میں کہ پتھر سہی تعبیر صنم خانہ ہوں

    تو مرا شعلۂ جاں تیشے کی جھنکار سے دیکھ

    زد میں آتے رہے تیرے شہ و فرزیں کیا کیا

    اپنی جیتی ہوئی بازی کو مری ہار سے دیکھ

    شاذؔ سورج بھی تماشائی ہوا آج کے دن

    رخصت سایۂ دیوار ہے دیوار سے دیکھ

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Shaz Tamkanat (Pg. 332)
    • Author : Shaz Tamkanat
    • مطبع : Educational Publishing House (2004)
    • اشاعت : 2004

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY