دل میں یوں پیار کی اک تازہ کہانی مہکے

منصور عثمانی

دل میں یوں پیار کی اک تازہ کہانی مہکے

منصور عثمانی

MORE BYمنصور عثمانی

    دل میں یوں پیار کی اک تازہ کہانی مہکے

    جیسے آنگن مین کہیں رات کی رانی مہکے

    میں نے لفظوں کو کہاں اس کی طرف موڑا ہے

    ذکر آ جائے جو اس کا تو کہانی مہکے

    سر سے پا تک اسے خوشبو کا خزانہ کہیے

    بیٹھے دریا میں اتر جائے تو پانی مہکے

    غم کی صدیوں کی امانت ہے غزل کی تہذیب

    میرؔ کے بعد اسی رنگ میں فانیؔ مہکے

    اس کو کہتے ہیں محبت کا کرشمہ منصورؔ

    میری غزلوں میں مرا دشمن جانی مہکے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY