غم سہتے ہیں پر غمزۂ بے جا نہیں اٹھتا

منیرؔ  شکوہ آبادی

غم سہتے ہیں پر غمزۂ بے جا نہیں اٹھتا

منیرؔ  شکوہ آبادی

MORE BYمنیرؔ  شکوہ آبادی

    غم سہتے ہیں پر غمزۂ بے جا نہیں اٹھتا

    مرتے ہیں مگر ناز مسیحا نہیں اٹھتا

    کب پان رقیبوں کو عنایت نہیں ہوتے

    کس روز مرے قتل کا بیڑا نہیں اٹھتا

    بل پڑتے ہیں پہونچے میں لچکتی ہے کلائی

    نازک ہیں بہت پھولوں کا گجرا نہیں اٹھتا

    فرمائیے ارشاد پہاڑوں کو اٹھا لوں

    پر رشک کا صدمہ نہیں اٹھتا نہیں اٹھتا

    کوچہ میں منیرؔ ان کے میں بیٹھا تو وہ بولے

    ہے ہے مرے دروازے سے پہرا نہیں اٹھتا

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY