عجیب رونا سسکنا نواح جاں میں ہے

راجیندر منچندا بانی

عجیب رونا سسکنا نواح جاں میں ہے

راجیندر منچندا بانی

MORE BYراجیندر منچندا بانی

    عجیب رونا سسکنا نواح جاں میں ہے

    یہ اور کون مرے ساتھ امتحاں میں ہے

    یہ رات گزرے تو دیکھوں طرف طرف کیا ہے

    ابھی تو میرے لئے سب کچھ آسماں میں ہے

    کٹے گا سر بھی اسی کا کہ یہ عجب کردار

    کبھی الگ بھی ہے شامل بھی داستاں میں ہے

    تمام شہر کو مسمار کر رہی ہے ہوا

    میں دیکھتا ہوں وہ محفوظ کس مکاں میں ہے

    نہ جانے کس سے تری گفتگو رہی بانیؔ

    یہ ایک زہر کہ اب تک تری زباں میں ہے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے