حرص دعا نہ ہو ہوس التجا نہ ہو

شفا گوالیاری

حرص دعا نہ ہو ہوس التجا نہ ہو

شفا گوالیاری

MORE BYشفا گوالیاری

    حرص دعا نہ ہو ہوس التجا نہ ہو

    الفت کا جب مزہ ہے کوئی مدعا نہ ہو

    تو ان کی بے وفائی پہ شکوہ سرا نہ ہو

    قدر وفا نہ ہو وہ اگر بے وفا نہ ہو

    تصویر بن کے دیکھ بہ آداب دید انہیں

    جنبش نہ ہو نگاہ کو دل بولتا نہ ہو

    آسودگان عیش بتائیں وہ کیا کرے

    جس کو بہ قدر حوصلہ غم بھی ملا نہ ہو

    اے بے خودی خودی کی طرف آنکھ پھیر دے

    دیکھیں کہیں حجاب خودی میں خدا نہ ہو

    اس وقت شاید ان کا پتا مل سکے تجھے

    جب تیرا اپنی ہستی کی حد تک پتا نہ ہو

    اظہار مدعا ہو شفاؔ اس ادا کے ساتھ

    دست دعا بھی واقف نفس دعا نہ ہو

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY