ادھر ادھر جو چراغ ٹوٹے پڑے ہوئے ہیں

رازق انصاری

ادھر ادھر جو چراغ ٹوٹے پڑے ہوئے ہیں

رازق انصاری

MORE BYرازق انصاری

    ادھر ادھر جو چراغ ٹوٹے پڑے ہوئے ہیں

    سلام ان کو یہ آندھیوں سے لڑے ہوئے ہیں

    دکھا رہے ہیں ہمیں جو اپنا پھلا کے سینہ

    ہمیں پتہ ہے یہ کس کے بل پر کھڑے ہوئے ہیں

    گلے ملانے کی صلح کی ہو پہل کدھر سے

    ابھی تو دونوں ہی اپنی ضد پر اڑے ہوئے ہیں

    حقیقتیں سب دبی ہوئی ہیں انہی کے نیچے

    سیاسی لوگوں نے ایسے قصے گھڑے ہوئے ہیں

    دکھائی دینے لگے ہیں رشتے تمام بونے

    ابھی تو صاحب کما کے دولت بڑے ہوئے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY