عشق ناکام کا دستور تمہیں کیا معلوم

جرم محمد آبادی

عشق ناکام کا دستور تمہیں کیا معلوم

جرم محمد آبادی

MORE BYجرم محمد آبادی

    عشق ناکام کا دستور تمہیں کیا معلوم

    تم ہو اس سے حد بہت دور تمہیں کیا معلوم

    غم کی دنیا سے ہو تم دور تمہیں کیا معلوم

    آہ کیوں کرتے ہیں مجبور تمہیں کیا معلوم

    زخم دل خوگر آزار کا بڑھتے بڑھتے

    کس طرح بنتا ہے ناسور تمہیں کیا معلوم

    ختم ہونے کو ہے ہنگامۂ طوفان حیات

    درد کیوں ہوتا ہے کافور تمہیں کیا معلوم

    عشق سرجوش نے کیا دل پہ ستم توڑے ہیں

    نشۂ حسن سے ہو چور تمہیں کیا معلوم

    تم الگ ہو گئے پردے سے گرا کر بجلی

    کس پہ کیا گزری سر طور تمہیں کیا معلوم

    اپنے شعروں میں ادا کرکے تمہاری شوخی

    ہو گیا جرمؔ بھی مشہور تمہیں کیا معلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY