عشق نے کر دیا کیا کیا سخن آرا ترے نام

ضیا فاروقی

عشق نے کر دیا کیا کیا سخن آرا ترے نام

ضیا فاروقی

MORE BYضیا فاروقی

    عشق نے کر دیا کیا کیا سخن آرا ترے نام

    وہ جو گاتا تھا فلک پر وہ ستارا ترے نام

    اسی فیاضی کا سایہ ہے مرے لفظوں پر

    جس نے بخشا ہے سمرقند و بخارا ترے نام

    اور میں دیتا بھی کیا اپنے جنوں کی قیمت

    کر دیا موسم گل سارے کا سارا ترے نام

    چشم گریاں کی قسم دیدۂ ویراں کی قسم

    وادئ شوق کا ہر ایک نظارا ترے نام

    جتنے نقصان تھے سب خود ہی اٹھائے ہیں ضیاؔ

    میں نے رکھا ہی نہیں کوئی خسارا ترے نام

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ضیا فاروقی

    ضیا فاروقی

    RECITATIONS

    ضیا فاروقی

    ضیا فاروقی,

    ضیا فاروقی

    عشق نے کر دیا کیا کیا سخن آرا ترے نام ضیا فاروقی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY