اتنا سکون تو غم پنہاں میں آ گیا

حنیف اخگر

اتنا سکون تو غم پنہاں میں آ گیا

حنیف اخگر

MORE BYحنیف اخگر

    اتنا سکون تو غم پنہاں میں آ گیا

    آغوش دل سے دامن مژگاں میں آ گیا

    دل اشک بن کے دیدۂ گریاں میں آ گیا

    خورشید جیسے روزن زنداں میں آ گیا

    مجھ کو تو رنگ و بو میں الجھنے سے تھا گریز

    میں نے یہ کیا کیا کہ گلستاں میں آ گیا

    عکس جمال یار بتدریج ذوق دید

    آنکھوں سے دل میں دل سے رگ جاں میں آ گیا

    پھر میرے اپنے آپ میں رہنے کا کیا سوال

    جب وہ مرے حریم دل و جاں میں آ گیا

    مرہم کا نام لے کے نہ زخموں کو چھیڑئیے

    مرہم بھلا کہاں سے نمکداں میں آ گیا

    وحشت اثر فضا ہے نہ دیوار و در یہاں

    بیکار ہی میں گھر سے بیاباں میں آ گیا

    اخگرؔ جنون عشق نوردی کدھر گیا

    مجنوں تو میرے خانۂ ویراں میں آ گیا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    حنیف اخگر

    حنیف اخگر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY